خواتین کے لیے متوازن غذا

ہمارا آج کا موضوع خواتین کی متوازن غذا کے بارے میں ہے

ہمارے معاشرہ میں اکثر جگہ اور خاص طور پر جہاں تعلیم و شعور کی کمی ہے وہاں عورت کو وہ سب سہولیات ہوتے بھی میسر نہیں جو اس کا حق ہیں اور کہیں تعلیم کی کمی کی وجہ سے متوازن غذا کا علم ہی نہیں۔ وہ مرغی مچھلی کو ہی اچھی غذا سمجھتے ہیں اس لیے عورت کو وہ غذا فراہم نہیں کی جاتی جس کی اسے ضرورت ہے اور اسے ضروری سمجھا نہیں جاتا۔

یاد رکھنے کی بات یہ ہے کہ عورت آپ کی نسل کو آگے بڑھاتی ہے جس میں اس کے جسم پر کافی اثرات ہوتے ہیں جو کمزوری کا سبب بنتے ہیں اور اسی کی وجہ سے پاکستان میں دورانِ حمل اور زچگی کے دوران کافی اموات ہوتی ہیں۔

آئیے آج ہم خواتین کی متوازن غذا کے بارے میں جانتے ہیں اور مرغی مچھلی کے متبادلات کے بارے میں بھی جانتے ہیں کہ کس طرح روز مرہ کی عام خوراک سے متوازن غذا پوری کی جاسکتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   نومولود بچے اور ناف کی حفاظت

ایک بالغ لڑکی یا نوجوان عورت کی متوازن غذا

2200 کلو کیلیریز فی دن (24 گھنٹے)

اس میں مندرجہ ذیل چیزیں شامل ہونی چاہیں

1۔ اجناس و اشیاء (Staples)

٭ روٹی ، چاول ، آلو

٭ ایک روٹی = ایک پلیٹ چاول =ایک درمیانہ آلو

( یعنی پورے دن میں پانچ روٹیاں، یا پانچ پلیٹ چاول یا پانچ آلو)

لحمیات (Proteins)

٭ انڈے ، مچھلی ، گوشت، مرغی، پھلیاں ، دالیں دودھ یا دھی

( یعنی پورے دن میں ایک انڈہ ، 1/8 پاؤ مچھلی، گوشت یا مرغی

یا ایک کپ پکی ہوئی دال یا دو کپ دودھ ( ایک کپ دودھ برابر ہے آدھا کپ دھی کے )

3۔ سبزیاں اور میوہ جات (Fruits and Vegetables)

٭ موسم کے حساب سے سب میوہ جات اور سبزیاں

یہ بھی پڑھیں:   تقابل، موازنہ، قیاس اور ہمارے دعوے

٭ خاص طور پر گہرے سبز رنگ کی سبزیاں اور پیلے رنگ کے میوہ جات

(یعنی پورے دن میں ایک کپ پکی ہوئی سبزی یا تین ٹکڑے کسی بھی فروٹ کے)

4۔ حرارے (Calories)

٭ گھی اور چینی

(یعنی پورے دن میں نو چائے کے چمچ گھی یا آٹھ چائے کے چمچ چینی)

5۔ پانی

٭ آٹھ سے 10 گلاس پانی۔

6۔ آیوڈین ملا نمک

کچھ مزید باتیں

٭ ہر عورت دورانِ حمل 300 کلو کیلریز مزید استعمال کرے یعنی ایک روٹی چوتھائی کپ دال چوتھائی کپ سبزی غذا میں بڑھا دے اور ٹوٹل 2500 کلو کیلریز استعمال کرے

٭ بچوں کو دودھ پلانے والی مائیں 200 کلو کیلریز مزید استعمال کریں یعنی 2700 کلو کیلریز روزانہ ۔ یعنی ایک گلاس دودھ یا آدھا کپ دہی چوتھائی کپ دال چوتھائی کپ سبزی غذا بڑھادے۔

یہ بھی پڑھیں:   نماز کی ادائیگی اور ہماری ترجیحات

٭ متوازن غذا کو لوگوں کے زندگی کے معیار کو مدنظر رکھتے ہوئی ترتیب دیا گیا ہے یعنی جو لوگ مچھلی گوشت وغیرہ نہیں خرید سکتے وہ دال سے اپنی کیلریز پوری کریں اور جو میوہ جات نہیں لے سکتے وہ سبزیوں سے اپنی غذا پوری کریں۔

## یاد رکھیے ایک صحتمند ماں ہی ایک صحتمند معاشرہ تشکیل دے سکتی ہے

(200 مرتبہ دیکھا گیا)

ڈاکٹر سید عطاء المصطفی

ڈاکٹر سید عطاء المصطفی

ڈاکٹر سید عطاء المصطفی ایم بی بی ایس ڈاکٹر ہیں۔ سندھ ضلع سانگھڑ میں رہائش پذیر ہیں اور بیسک ہیلتھ ہونٹ کے انچارج کے طور پر تعینات ہیں۔ وہ ڈاکٹر ہونے کے ساتھ ادب دوست انسان ہیں اور فارغ اوقات میں شعر و شاعری پر بھی کرتے ہیں۔ اردو سرائے پر ان کی طب کے حوالے سے تحریریں شائع کی جاتی ہیں جو کہ طب اور صحت کے زمرے میں کلک کرکے پڑھی جاسکتی ہیں۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

1 تبصرہ

  1. Zulfiqar mughal says:

    Bohat aala

تبصرہ کریں