دعا سیریز 3: (پریشانی سے نجات کی دعا)

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے مصیبت اور پریشانی کے وقت یہ دعا پڑھنے کی ترغیب دی ہے:

”إِنَّا لِلّٰهِ وَإِنَّا إِلَيْهِ رَاجِعُوْنَ ، اَللّٰهُمَّ أْجُرْنِىْ فِىْ مُصِيْبَتِىْ وَأَخْلِفْ لِىْ خَيْرًا مِنْهَا۔“

(صحیح مسلم ، کتاب الجنائز ، باب ما یقال عند المصیبة ، الرقم:2165 ، دار الجبر بیروت)

اس دعا میں دو غلطیاں دیکھنے اور سننے میں آتی ہیں:

(1) ”أْجُرْنِىْ“ کو دو طرح پڑھنا درست ہے: ایک ”ء“ کے سکون اور ”ج“ کے پیش کے ساتھ اور دوسرا ”ا“ پر کھڑی زبر اور ”ج“ کے زیر کے ساتھ ”اٰجِر“ بروزن ”آخِر“ ، مگر بعض لوگ اسے ”أَجِرْنِىْ“ (”ء“ کے زبر اور ”ج“ کے زیر کے ساتھ ”اَجِرْنِیْ مِنَ النَّارِ“ کی طرح) پڑھتے ہیں جو کہ غلط ہے۔

(2) ”أَخْلِفْ“ میں ”ء“ پر زبر اور ”ل“ کے نیچے زیر ہے ، مگر بعض لوگ اسے ”اخْلُفْ“ (”ا“ کے حذف اور ”ل“ کے پیش کے ساتھ) پڑھتے ہیں یہ بھی درست نہیں ہے۔

حوالہ جات:

1) ”وأما في قوله صلى الله عليه وسلم : " اللهم آجرني في مصيبتي " فآجر ها هنا أمر من الإيجار من باب الإفعال من الأجر ، وأيضا يروى فيه أجرني بسكون الهمزة وضم الجيم من باب نصر ينصر من الأجر ، وعلى كلتا الروايتين معنى واحد أي أعطني أجرا وثوابا في مصيبتي. قال في اللسان : وفي حديث أم سلمة : " آجرني الله في مصيبتي وأخلف لي خيرا منها " آجره يوجره إذا أثابه وأعطاه الأجر والجزاء وكذلك أجره يأجره ويأجره والأمر منهما آجرني وأجرني انتهى . وفي مجمع البحار : آجرني في مصيبتي آجره يوجره إذا أثابه وأعطاه الأجر والجزاء ، وكذا أجره يأجره وأجرني في مصيبتي بسكون الهمزة وضم الجيم إن كان ثلاثيا وإلا فبفتح همزة ممدودة وبكسر الجيم من آجره الله أعطاه جزاء صبره وهو بالقصر أكثر انتهى. وفي النهاية آجره يوجره إذا أثابه وأعطاه الأجر والجزاء وكذلك أجره يأجره والأمر منهما آجرني وأجرني انتهى“

(عون المعبود ، کتاب الأدب ، باب ما یقول إذا أصبح ، 13/ 287 ، الرقم:5079 ، دار الکتب العلمیة بیروت)

2) ”وَقَوْله صَلَّى اللَّه عَلَيْهِ وَسَلَّمَ : ( وَأَخْلِفْ لِي ) هُوَ بِقَطْعِ الْهَمْزَة وَكَسْر اللَّام۔“ (شرح النووي على مسلم ، کتاب الجنائز ، باب ما یقال عند المصیبة ، 6/ 220 ، الرقم:918 ، دار إحیاء التراث العربی بیروت)

دعا سیریز:

یہ بھی پڑھیں:   ٹھگ بھائیوں سے گزارش

(1) کھانا کھانے سے پہلے کی دعا

(2) کھانا کھانے کے بعد کی دعا

(3) پریشانی سے نجات کی دعا

(343 مرتبہ دیکھا گیا)

محمد اسامہ سرسری

محمد اسامہ سرسری مستند عالِمِ دین اور فقہِ اسلامی کے متخصص ہیں۔ اسامہ صاحب دینی تعلیمات کے ساتھ ادبی اور فنی سرگرمیوں کا بھی فعال حصہ ہیں۔ انتہائی محنتی اور معاون طبیعت رکھتے ہیں اور متعدد کتب کے مصنف بھی ہیں ، کتاب "آؤ شاعری سیکھیں" ان کی اب تک کی شہ کار تصنیف ہے جسے اندرون و بیرون ملک ہر جگہ خوب پذیرائی ملی ہے۔ سوشل نیٹ ورک پر سینکڑوں لوگوں کو ادب اور شاعری کی فنیات آسان انداز میں سبقاً سبقاً سکھاتے ہیں۔

آپ یہ صفحات بھی دیکھنا پسند کریں گے ۔ ۔ ۔

تبصرہ کریں