موضوع: علم عروض

علمِ عَروض سبق ۴ 3

علمِ عَروض سبق ۴

علم عروض میں اب تلک ہم نے ذیل میں درج چار چیزوں کو جانا: 1۔ بحر  2۔ ارکان/ افاعیل/ تفاعیل 3۔ تقطیع 4۔ مرکب (ایک سے زائد ا رکان سے بنی) و مفرد (ایک...

علمِ عَروض سبق ۳ 3

علمِ عَروض سبق ۳

اب تک کے دو اسباق میں ہم علم عروض کے حوالے سے بحر،ارکان، وزن اور آہنگ کے بارے میں سمجھتے آرہے ہیں اور امید ہے کے آپ کو سمجھ بھی آرہا ہوگا۔  اب تک...

علمِ عَروض سبق ۲ 0

علمِ عَروض سبق ۲

اب تک آپ یہ تو سمجھ چکے ہیں کہ علمِ عروض کیا ہے اور اس میں ”بحر“ کیا کام انجام دیتی ہے۔  اب آگے بڑھتے ہیں ۔۔۔ پہلے تو آپ کو میں یہ بات...

علمِ عَروض سبق ۱ 7

علمِ عَروض سبق ۱

“علمِ عروض کا مختصر ترین تعارف” علم عَروض وہ علم ہے جس میں کسی شعر کا وزن معلوم کیا جاتا ہے یا کسی شعر کو وزن میں رکھنے میں رہنمائی لی جاتی ہے۔ مثلاً...

0

فدائے دلبرِ رنگیں ادا ہوں

غزل (ولی دکنی) فدائے دلبرِ رنگیں ادا ہوں شہیدِ شاہدِ گل گوں قبا ہوں ہر اک مہ رو کے ملنے کا نئیں ذوق سخن کے آشنا کا آشنا ہوں کیا ہوں ترک نرگس کا...

رباعی کے ”دو“ اوزان 2

رباعی کے ”دو“ اوزان

ابھی کچھ دیر پہلے ایک عزیز سے رباعی کے اوزان کے متعلق بات چل رہی تھی کہ رباعی کے چوبیس اوزان کو یاد رکھنا بڑا مشکل کام ہے اور بڑے بڑے عروضی بھی ان...

میر کی ہندی بحر کی حقیقت 3

میر کی ہندی بحر کی حقیقت

کیوں جناب؟ کچھ جانتے ہیں کہ کیا ہے ہندی بحر؟ یقیناً آپ نے یہی سن رکھا ہوگا اس بحر کے بارے میں کے اس بحر کو میرؔ نے ہندی پنگل کی بحور میں سے...